55

پاکستانی لیجنڈ اداکار گلوکار مرزا ندیم بیگ

پاکستانی لیجنڈ فلم اسٹار مرزا نذیربیگ)ندیم(
اداکار، گلوکار اور پروڈیوسر. 19 جولائی 1941 کو وجے واڑہ میں پیدا ہوئے جو اس وقت برطانوی ہندوستان میں مدراس پریذیڈنسی کا حصہ تھا۔ ندیم 1947 میں پاکستان کی آزادی کے بعد اپنے خاندان کے ساتھ مشرقی پاکستان کے شہر ڈھاکہ چلے گئے۔ پاکستانی فلمی صنعت میں آنے سے پہلے گورنمنٹ اسلامیہ سائنس کالج کراچی میں کچھ سال پڑھائی کی۔
ندیم، اور فنکار طلعت حسین، ایم ظہیر خان، آفتاب عظیم، سلیم جعفری، اور ٹی وی پروڈیوسر اقبال حیدر، سبھی 1960 کی دہائی میں کراچی کے ایک کلب میں دریافت ہوئے تھے۔ندیم اور ان کے دوستوں امیر احمد خان اور قاسم صدیقی نے موسیقی کے کئی مقابلے جیتے۔ موسیقی کے ان مقابلوں میں سے ایک میں انہیں گلوکار فردوسی رحمان نے دیکھا۔ وہ ان کی گلوکاری کی صلاحیتوں سے بہت متاثر ہوئیں اور انہیں ڈھاکہ کی فلم انڈسٹری میں پلے بیک گانے کی کوشش کرنے کی ترغیب دی۔گلوکاری کے میدان میں وہ کامیاب نہیں ہو سکے۔
ندیم کو ہیرو کے کردار میں بہترین پاکستانی اداکار مانا جاتا ہے۔ وہ اپنے 56 سالہ طویل کیریئر کے دوران دو سو سے زیادہ فلموں میں زیادہ تر مرکزی میں نظر آئے کہا جاتا ہے کہ لالی وڈ کی تاریخ ندیم کے نام کے بغیر ادھوری ہے۔ انہیں 1997 میں پرائیڈ آف پرفارمنس ایوارڈ سے بھی نوازا جا چکا ہے۔ انہوں نے بطور اداکار ریکارڈ 16 نگار ایوارڈز بھی جیتے ہیں۔
اپنے کیریئر میں ندیم کو زیادہ تر احمد رشدی نے آواز دی اور بعد میں اخلاق احمد نے اپنی آواز دی۔ انہوں نے تسلیم کیا کہ رشدی کی آواز میں گانے نے ان کے کام کو آسان بنایا اور ان کی کامیابی میں اہم کردار ادا کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں